ہندوستان کے پہلے اینٹی سیٹلائٹ میزائل اے سیٹ پر ڈاک ٹکٹ جاری کی گئی

Image default
Urdu News

محکمہ ڈاک نے آج انجینئروں کے دن کے موقع پر ہندوستان کے پہلے اینٹی سیٹلائٹ میزائل اے سیٹ پر ڈاک ٹکٹ جاری کیا۔ اس موقع پر قومی سلامتی کے مشیر جناب اجیت ڈوبھال بھی موجود تھے۔

وزیر اعظم جناب نریندر مودی کی ہدایت پر دفاعی تحقیق وترقی کے ادارے ڈی آر ڈی او 27 مارچ 2019 کو اڈیشہ میں ڈاکٹر اے پی جے عبد الکلام جزیرے سے اینٹی سیٹلائٹ میزائل ٹسٹ ’مشن شکتی  کی کامیابی سے آزمائش کی تھی۔  ڈی آر ڈی او نے یہ میزائل تیار کیا تھا۔ اس میزائل نے ہٹ ٹو کل موڈ میں لوارتھ اور بٹ (ایل ای او) میں ایک ہندوستان اور بیٹنگ ٹارگیٹ سیٹلائٹ کو کامیابی سے انگیج کیا۔ انٹرسیپٹر میزائل دو سالٹ راکٹ بوسٹرس کے ساتھ ایک تین اسٹیج والا میزائل سیٹلائٹ تھا۔ رینج سینسرس سے ٹریکنیگ ڈاٹا سے اس بات کی تصدیق ہوگئی تھی کہ مشن نے اپنے تمام مقاصد پورے کرلیے ہیں۔ یہ پوری کوشش ملک کی اندرونی تکنیک پر مشتمل تھی جس نے اس طرح کے پیچیدہ اور اہم مشنوں کو تیار کرکے ملک کی صلاحیت کا مظاہرہ کیا۔

اس مشن میں بہت سی صنعتوں نے بھی حصہ  لیا۔ اس کامیابی کے ساتھ ہندوستان اس طرح کی صلاحیت رکھنے والا دنیا کاچوتھا ملک بن گیا ہے۔ جناب اجیت ڈوبھال نے اپنے خطاب میں کہا کہ مشن شکتی کو پورا کرنےکی ڈی آر ڈی او کی کوشش ایک بہت حوصلہ کن قدم ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ڈی آر ڈی او نے بہت سے کارنامے انجام دیے ہیں جن پر فخر کیا جاسکتا ہے۔ البتہ مستقبل خلا پر مبنی ٹکنالوجیز پر ہے۔ سیٹلائٹس بہت اہم ہیں  اور اس صلاحیت کے ساتھ ہندوستان خلا میں اپنے اثاثوں کا دفاع کرسکتا ہے۔

انہوں نے اس طریقہ کار کی تعریف کی جن میں مشن کو خفیہ رکھا گیا۔ انہوں نے دیگر تمام شعبوں میں عمدہ کارکردگی انجام دینےکے لئے ڈی آر ڈی او برادری کی تعریف کی۔

اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے ڈی آر ڈی او کے سکریٹری اور ڈی آر ڈی او کےچیئرمین ڈاکٹر جی ستیش ریڈی  نے ڈی آر ڈی او میں اعتماد بنائے رکھنے کے لئے وزیر اعظم اور قومی سلامتی کے مشیر کا شکریہ ادا کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اینٹی سیٹلائٹ مشن بہت سی ٹکنالوجیز کو فروغ دے سکا ہے۔ انہوں نے ڈی آر ڈی او برادری سے اپیل کی کہ وہ اس طرح کے مزید اہم اور پیچیدہ پروجیکٹس کو کامیاب بنانے کے لئے آگے آئیں۔ اس موقع پر منعقد تقریب میں محکمہ ڈاک کے سکریٹری پرادیپتا کمار بسوئی اور ڈی آر ڈی او کے سینئر سائنس دانوں نے بھی شرکت کی۔

Related posts

ایئر لائنوں نے ملک بھر میں طبی ساز و سامان سپلائی کے لئے لائف لائن اُڑان کے تحت 2 لاکھ کلو میٹر سے زیادہ کا فاصلہ طے کیا

ڈاکٹر جیتندر سنگھ نے ’’جوہری توانائی –صاف ستھری اور بیس لوڈ انرجی کی سمت میں‘‘ کے موضوع پر دسویں جوہری توانائی کنکلیو کا افتتاح کیا

ضلع اور ذیلی عدالتوں تک ڈبلیو اے این کنکٹویٹی