مارچ2019 کے دوران جی ایس ٹی محصولات کی وصولی ایک لاکھ کروڑ روپے سے تجاوز کرگئی اور یہ مالی برس 2018-19 کے دوران اب تک کی جی ایس ٹی محصولات کی سب سے زیادہ وصولی ہے

Urdu News

نئی دہلی، میں وصول کیے گیے کل جی ایس ٹی محصولات 1,06,577  کروڑ  روپے ہیں،جنمیں سی جی ایس ٹی 20,353 کروڑ  روپے، ایس جی ایس ٹی 27,520 کروڑ  روپے، آئی جی ایس ٹی 50,418 کروڑ  روپے(بشمول درآمدات سے وصول کیے گیے 23,521 کروڑ روپے) اور سیس 8,286 کروڑ  روپے(بشمول در آمدات سے حاصل کیے گیے 891 کروڑ روپے ) ہیں ۔ فروری کے مہینے کے لئے31 مارچ 2019 تک داخل کئے گئے کل جی ایس ٹی آر 3 بی ریٹرن کی کل تعداد75.95 لاکھ ہے ۔

 حکومت نے مستقل ادائیگی کے طور پر آئی جی ایس ٹی  سے سی سی ایس ٹی کی مد میں 17,261 کروڑ وپے اور ایس  جی ایس ٹی کی مد میں

 13,689 کروڑ روپے کی ادائیگی کی ہے۔مزید برآں مرکز  اور  ریاستوں کے درمیان 50:50 کے تناسب میں  عارضی بنیاد پر مرکز کے  پاس دستیاب آئی جی ایس ٹی سے 20,000کروڑ روپے کی ادائیگی کی گئی ہے۔ مارچ2019 میں مستقل اور عارضی ادائیگی کے بعد مرکزی حکومت اور ریاستی حکومت کے ذریعہ حاصل کیا گیا کل مالیہ سی جی ایس ٹی کے لئے47,614 کروڑ روپےاور ایس جی ایس ٹی کے لئے 51,209 کروڑ روپے ہیں۔

 جی ایس ٹی کو متعارف کرانے کے بعد سے مارچ2019 کے دورانجی ایس ٹی محصولات کی یہ سب سے زیادہ وصولی ہے۔ مارچ2018 میں 92,167 کروڑ روپے کی جی ایس ٹی محصولات کی وصولی ہوئی تھی،جبکہ مارچ2019  کے دوران کل1,06,577  کروڑ روپے کی جی ایس ٹی محصولات کی وصولی ہوئی ہے۔ اس طرح سے پچھلے سال کے اسی مہینے کے مقابلے جی ایس ٹی محصولات میں  یہ 15.6 فیصد کااضافہ ہے۔مالی برس 2018-19  کے  آخری سہ ماہی کے دوران جی ایس ٹی محصولات کی وصولی پچھلے سال کی اسی مدت کے دوران ہوئی وصولی سے 14.3 فیصد زیادہ  ہے۔ مالی برس 2018-19  کے دوران جی ایس ٹی محصولات کی ماہانہ اوسط 98.114 کروڑ روپے ہیں  جو کہ پچھلے مالی برس 2017-18   کے مقابلے میں9.2 فیصد زیادہ ہے۔درج ذیل گوشوارہ  اس بات کو ظاہر کرتا ہے کہ  حالیہ مہینے کے دوران جی ایس ٹی محصولات کی شرح ترقی  میں لگاتار  اضافہ ہورہا  ہے۔ درج ذیل تصویر گزشتہ  مالی برس کے مقابلے رواں مالی برس کے دوران جی ایس ٹی  محصولات کے رجحانات کو واضح کرتی ہے۔

 http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image001YPXT.gif

Related posts

ملک کے 91 بڑے آبی ذخائر میں جمع پانی کی سطح میں ایک فیصد کی کمی واقع

ہندوستانی ریلوے نے کووڈ19 عالمی وباء کی حالیہ لہر کی روک تھام کے متعلقہ اقدامات کئے ہیں

وزیردفاع نے آٹھویں آسیان ڈیفنس منسٹرس میٹنگ – پلس کی میٹنگ میں بھارت -بحرالکاہل خطہ میں کھلے اور شمولیاتی نظام پر زور دیا