بھارت میں کووڈ-19 ٹیکہ کاری کی مجموعی تعداد 151.57 کروڑسے تجاوزکرگئی

Urdu News

 گذشتہ 24 گھنٹوں  کے دوران 89 لاکھ سے زیادہ (89,28,316)  ٹیکے لگائے جانے کے ساتھ ہی ،آج صبح 7 بجے تک موصولہ عبوری رپورٹ کے مطابق بھارت میں کووڈ-19ٹیکہ کاری کی مجموعی تعداد 151.57 کروڑ (1,51,57,60,645) تک پہنچ گئی ہے۔

اس کامیابی کو حاصل کرنے کے لئے ملک بھر میں 1,61,76,087 سیشنز کا انعقاد کیا گیا۔  آج صبح 7 بجے تک  حاصل عبوری رپورٹ درج ذیل کے مطابق ہے:

طبی کارکنان

پہلی خوراک

1,03,88,856

دوسری خوراک

97,41,004

صف اوّل کے کارکنان

پہلی خوراک

1,83,87,153

دوسری خوراک

1,69,69,726

15 تا18 سال کی عمر کے  افراد

پہلی خوراک

2,29,49,780

18 تا 44 سال کی عمر کے  افراد

پہلی خوراک

51,37,21,707

دوسری خوراک

35,13,24,009

45 تا 59 سال کی عمر کے افراد

پہلی خوراک

19,60,68,180

دوسری خوراک

15,59,53,930

60 سال سے زیادہ عمر کے افراد

پہلی خوراک

12,22,46,143

دوسری خوراک

9,80,10,157

مجموعی تعداد

1,51,57,60,645

پچھلے 24 گھنٹے میں 40,863 مریض روبہ صحت ہوئے ہیں۔ اس کے ساتھ ہی شفایاب ہونے والوں کی مجموعی تعداد بڑھ کر (عالمی وباپھوٹ پڑنے کے بعد سے ) 3,44,53,603 ہوگئی ہے۔

جس کے نتیجے میں، بھارت میں صحت یابی کی شرح 69.98  فیصد  ہوگئی ہے۔

گزشتہ 24 گھنٹے کے دورا ن 1,59,632  نئے معاملات درج ہوئے ہیں۔

سردست زیر علاج مریضوں کی تعداد 5,90,611 ہے ۔ زیر علاج مریضوں کی تعداد  ملک بھرکے مجموعی  متاثرہ معاملوں کا 1.66 فیصد ہیں ۔

ملک بھر میں جانچ کی صلاحیت میں خاطر خواہ اضافہ درج ہورہاہے۔گذشتہ 24 گھنٹے میں مجموعی طور پر 15,63,566 نمونوں کی جانچ کی گئی ۔ بھارت میں  اب تک مجموعی طور پر تقریباً 69 کروڑ (69,00,34,525) نمونوں کی جانچ کی جاچکی ہے۔

اب جب کہ ملک بھر میں طبی جانچ کی صلاحیت میں اضافہ کیا جا چکا ہے، جانچ کے بعدمتاثرپائے جانےوالےافراد کی ہفتہ وار شرح سردست 6.77 فیصد ہوگئی ہےاور  ایک دن میں جانچ کے بعد متاثر پائےجانے والے افراد کی شرح  10.21 فیصد ہے۔

Related posts

شرومنی گوردوارہ پربندھک کمیٹی کے وفد نے فوڈ پراسیسنگ کی صنعتوں کی وزیر کی قیادت میں

کابینہ نے ڈبلیو آئی پی او کوپی رائٹ ٹریٹی -1996 اور ڈبلیو آئی پی او فنکاروں اور فونوگرامس ٹریٹی -1996 کے ساتھ منسلک ہونے کی منظوری دے دی ہے

ریلوے کی آراضی پر شجر کاری کی کیفیت سے واقف ہونے کے لیے وزیر ریلوے نے ریلوے بورڈ کے افسروں کے ساتھ نظرثانی میٹنگ کا اہتمام کیا