آدھار کے وائی سی کے ضابطوں کو آسان بنایا گیا ہے، نہ کہ آدھار میں دیئے گئے پتے کی تبدیلی کے لئے – Online Latest News Hindi News , Bollywood News
Breaking News
Home » Urdu News » آدھار کے وائی سی کے ضابطوں کو آسان بنایا گیا ہے، نہ کہ آدھار میں دیئے گئے پتے کی تبدیلی کے لئے

آدھار کے وائی سی کے ضابطوں کو آسان بنایا گیا ہے، نہ کہ آدھار میں دیئے گئے پتے کی تبدیلی کے لئے

نئی دہلی: بینک کھاتے  کھولنے کے لئے  آدھار کے وائی سی  کے ضابطوں کو  آسان بنایا گیا ہے   نہ کہ   آدھار میں دئیے گئے پتے کی تبدیلی کے لئے۔ یہ بات  وزارت خزانہ کے  محکمہ   ریونیو نے آج   آدھار کے وائی سی  کے لئے   استعمال   کے تعلق سے    وضاحت  پیش کرتے ہوئے کہی۔   محکمہ نے  یہ بات    منی لانڈرنگ    کی روک تھام     (ریکارڈز کا رکھ رکھاؤ) سے متعلق ضوابط ، 2005 میں   ترمیم سے متعلق    13 نومبر 2019 کو جاری کئے گئے  اپنے  نوٹی فکیشن کے   تناظر میں  کہی۔   محکمہ ریونیو نے  زوردے کر  اپنے بیان میں کہا ہے کہ    اس کا نوٹی فکیشن    کے وائی سی  کےلئے   آدھار کے   استعمال کو  آسان بنانے کے لئے   جاری کیاگیا ہے تاکہ     لوگوں کو    بینک کھاتے   کھوالنے میں آسانی ہو جو   اکثر    روزگار یا   کسی دوسرے مقصد سے   ایک جگہ سے   دوسری جگہ   منتقل ہوتے رہتے ہیں۔ محکمے نے کہا کہ اس نوٹی فکیشن کا تعلق  آدھار کارڈ میں دیئے گئے   پتے کو    تبدیل کرنے  سے نہیں ہے   جیسا کہ    غلط طریقے سےمختلف ذرائع ابلاغ میں  رپورٹ کیا گیا ہے۔

ریونیو سکریٹری   ڈاکٹر  اجے بھوشن پانڈے نے کہا کہ     ترمیم شدہ  پی ایم  ایل آر کا نفاذ   صرف    بینک کھاتہ  کھولنے کے لئے آدھار پر مبنی کے وائی سی  مقاصد   کےلئے ہوتا ہے۔    اس کا تعلق    آدھار کارڈ پر  دیئے گئے   پتے میں   تبدیلی سے   نہیں ہے۔   اگر کسی شخص نے    کام کے مقصد سے   اپنی رہائش گاہ تبدیل کی ہے اور    ایک نیا بینک کھاتے کھولنے یا    اپنے   بینک   کے برانچ   کو  تبدیل کرنے کے لئے آدھار پر مبنی کے وائی سی   کی  اسے ضرورت ہے   تو وہ     آدھار کارڈ پر   دیئے گئے   اصل پتے کو  برقرار رکھتے ہوئے   نئے پتے کے بارے میں ایک  سیلف  ڈکلیریشن   دے سکتا ہے۔

ڈاکٹر  پانڈے نے کہا کہ   پی ایم  ای  ضابطوں میں ترمیم ان لوگوں کے لئے جو  ان کے   آدھار میں  دیئے گئے   پتے سے  الگ  پتے پر  رہ رہے ہیں، بینک کھاتہ کھلوانے کے عمل   کو آسان  بناتی ہے۔ وہ لوگ   جو بینکوں میں    کے وائی سی کے طو رپر    الگ   پتے   کے لئے     آدھار کارڈ جمع کرتے ہیں  ،  وہ اب    ایک  سیلف ڈکلیریشن   دے کر     اپنا نیا پتہ    دے سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ     اس ترمیم سے      آدھار پر مبنی کے وائی سی  کے معاملے میں  مقامی    پتہ   یا  آدھار  پر  دیئے گئے پتے سے     مختلف   پتے کےبارے میں  سیلف ڈکلیریشن     دینا   بینک اکاؤنٹ کھولنے   کے لئے     ایڈریس پروف کے طور پر کافی ہوگا۔     اس ترمیم سے نقل مکانی کرنے والے لوگوں کو  خاص طور پر    آسانی   کو   مثال کے طور پر    اگر کوئی    نقل مکانی  کرنے والا   ورکر جھارکھنڈ سے  ممبئی آتا ہے  اور  اس کے آدھار پر   جھارکھنڈ کا پتہ  ہے، تو بینک کھاتہ کھولنے کے لئے    ممبئی میں    اپنے   مقامی پتے کے بارے میں سیلف ڈکلیریشن     دینا    آدھار  کے وائی سی کے لئے کافی ہوگا۔

ریونیو کے محکمے نے کہا کہ     یہ تبدیلی     پی ایم ایل  ضابطوں میں    ایک ترمیم کے ذریعہ    کی گئی ہے    نہ کہ اس کے لئے آدھار قانون/ریگولیشنز   کوئی تبدیلی  کی گئی ہے  ۔ لہذا   اس کا اطلاق  آدھار کارڈ پر  دیئے گئے   پتے  میں   تبدیلی  کے لئے    نہیں ہوتا ہے۔ یہ ترمیم    کےوائی سی کے طو ر پر   آدھار کا   استعمال   کرنے  والے   لوگوں کو  بینک کھاتہ  کھلوانے کی اجازت دینے کے لئے  کی گئی ہے  جو     بینک کھاتے میں جو پتہ دینا چاہتے ہیں جو    ان کے   آدھار میں   دیئے گئے  پتے سے   مختلف ہے۔

About admin